تیونس اور مراکش میں صدی معاملے کے خلاف احتجاجی مظاہرے

Rate this item
(0 votes)
تیونس اور مراکش میں صدی معاملے کے خلاف احتجاجی مظاہرے

تیونس اور مراکش میں امریکی صدرٹرمپ کے فلسطین کے بارے میں صدی ڈیل کے خلاف مظاہرے شروع ہوگئے ہیں مظاہرین نے مسئلہ فلسطین کے بارے میں امریکی صدر ٹرمپ کے یکطرفہ صدی معاملے کو رد کرتے ہوئے فلسطینی عوام کی بھر پور حمایت کا اعلان کیا ہے۔ مراکش کے دارالحکومت رباط میں امریکہ کے خلاف وسیع پیمانے پر مظاہرے ہوئے، مظاہرین نے امریکہ مردہ باد اور اسرائیل مردہ باد کے نعرے لگائے۔ ادھر تیونس میں ہزاروں افراد نے امریکہ کے خلاف مظاہرے میں شرکت کی اور صدی معاملے کی مذمت کرتے ہوئے اس کی حمایت کرنے والے عرب ممالک کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا۔ عرب ذرائع کے مطابق سعودی عرب، بحرین اور متحدہ عرب امارات نے امریکہ کے صدی معاملے کی حمایت کی ہے جبکہ دیگر عرب اور اسلامی ممالک امریکہ کے صدی معاملے کے خلاف ہیں۔ عرب اور اسلامی ممالک کے شہری سعودی عرب کے بادشاہ  شاہ سلمان کو خائن قراردے رہے ہیں جو خطے میں امریکی و اسرائیلی مفادات کو تحفظ فراہم کررہا ہے۔

Read 35 times

Add comment


Security code
Refresh