حماس کا بيان، قائد انقلاب اسلامي کا شکريہ

Rate this item
(0 votes)

فلسطين کي اسلامي تحريک مزاحمت حماس نے مسلمانوں کے اتحاد اور آٹھ روز جنگ غزہ ميں فلسطينيوں کي مزاحمت کي ستائش پر مبني قائد انقلاب اسلامي آيت اللہ العظمي سيد علي خامنہ اي کے بيان کا شکريہ ادا کيا ہےـ

تحريک حماس نے ايک بيان جاري کرکے کہا ہے کہ جب علاقہ اپنے دشوار دور سے گزر رہا ہے اور اسے گوناگوں سازشوں کا سامنا ہے قائد انقلاب اسلامي نے ايک بار پھر اپنے اتحاد آفريں اور رہنما بيان سے نگاہوں کو علاقے کي اصلي مشکل يعني مسئلہ فلسطين اور فتنہ و شر انگيزي کي اصلي جڑ يعني قدس کي غاصب صيہوني حکومت کے منحوس وجود کي طرف مرکوز کرايا ہےـ

حماس نے اپنے بيان ميں کہا ہے کہ فلسطيني تنظيموں کي مثالي استقامت و پائيداري کي قائد انقلاب اسلامي آيت اللہ العظمي سيد علي خامنہ اي کي زباني تعريف و ستائش نے دشمنوں کے ناپاک عزائم منجملہ تہران ميں حماس کا دفتر بند ہونے سے ليکر حماس کے رہنما پر بے جا الزام تراشي تک گوناگوں افواہوں کے ذريعے فلسطيني مجاہدين اور اسلامي جمہوريہ کے مابين اختلاف ڈالنے کي کوششوں کو ناکام کر ديا ہےـ

حماس کے بيان ميں آيا ہے کہ يہ تنظيم فلسطين کي مظلوم قوم اور فلسطيني مجاہدين کےلئے قائد انقلاب اسلامي آيت اللہ ا لعظمي سيد علي خامنہ اي کي دائمي حمايت کي قدرداني کرتي ہے اور ذرائع ابلاغ عامہ پر قائد انقلاب اسلامي کے بيانوں اور ارشادات پر انتہائي توجہ دينے، اطلاعات کي صحيح منتقلي نيز صيہوني مہروں کے ذريعے وقفے وقفے سے پھيلائي جانے والي افواہوں سے اجتناب کي ضرورت پر تاکيد کرتي ہےـ

قائد انقلاب اسلامي نے منگل کے روز تہران ميں اسلامي بيداري اور يونيورسٹي اساتذہ کے زير عنوان منعقد ہونے والي بين الاقوامي کانفرنس کے شرکاء سے خطاب ميں آٹھ روز جنگ غزہ ميں غاصب صيہوني حکومت کے خلاف فلسطينيوں کي مزاحمت کي تعريف کي اور فرمايا کہ کوئي يہ باور نہيں کر سکتا تھا کہ فلسطينيوں اور اسرائيل کے درميان ٹکراؤ کے بعد جنگ بندي کي شرطيں فلسطينيوں کي جانب سے رکھي جائيں گي ــ

Read 1298 times