ماہ مبارک رمضان کے بارے میں رہبر معظم کے فرمودات...

Rate this item
(0 votes)

ماہ مبارک رمضان کے بارے میں رہبر معظم کے فرمودات...

تدبر کے ساتھ قرآن کی تلاوت:

دوستو! کوشش کریں کہ ہر وقت، بالخصوص ماہ مبارک رمضان میں، قرآن کی تلاوت فراموش نہ ہو، قرآن آپ کی زندگیوں سے حذف نہیں ہونا چاہئے۔

قرآن کی تلاوت ضرور کیا کریں، جتنا بھی ممکن ہو، غور و فکر، تفکر و تدبر کے ساتھ قرآن کی تلاوت اثر رکھتی ہے، جلدی جلدی تلاوت کرنا یعنی انسان بس تلاوت کرے اور اس آیت کے معنا و مفاہیم کو نہ سمجھے ، تلاوت قرآن کا مطلوب و مقصود نہیں ہے، یہ نہیں ہے کہ اس کا کوئی فائدہ نہیں ہے، یہی کہ انسان اس چیز کی طرف متوجہ ہے کہ یہ کلام اللہ ہے، خود یہی بات ایک رشتے کو ایک تعلق کو بیان کر رہا ہے، یہی غنیمت ہے اور کسی کو اس طرح قرآن پڑھنے سے نہیں روکنا چاہئے۔

لیکن اس طرح قرآن کی تلاوت مورد نظر اور مطلوب و پسندیدہ نہیں ہے۔ مطلوب اور پسندیدہ تلاوت قرآن وہ ہے کہ انسان فکر و تدبر کے ساتھ اس کی تلاوت کرے اور کلمات الہی کو سمجھنے کی کوشش کرے، کہ ہماری نظر میں ان کو سمجھا جا سکتا ہے۔

اگر انسان عربی گرامر کو سمجھتا ہے اور وہ کلمات جن کو نہیں سمجھ پاتا ان کے لئے ترجمے کی طرف رجوع کرے اور اسی ترجمے میں غور فکر کرے۔ دو مرتبہ، تین مرتبہ، پانچ مرتبہ جب پڑھ لے گا، تو وہ شخص اس آیت کے مضمون کا ایسا فہم اور شعور حاصل کر لے گا کہ جو کسی اور طریقے سے حاصل نہیں ہو سکتی، یہ چیز اکثر غور و فکر سے حاصل ہو تی ہے ، آپ اس کا تجربہ کر کے دیکھ لیں۔

لہذا جب کوئی شخص ایک آیت کی پہلی بار تلاوت کرتا ہے یعنی ایک ساتھ دس مرتبط آیات کی تلاوت کرتا ہے تو ایک خاص احساس رکھتا ہے اور اس آیت کے معنی سمجھنے میں غلطی بھی کرتا ہے۔ دوسری مرتبہ، پانچویں مرتبہ، دسویں مرتبہ جب اس آیت کو توجہ کے ساتھ پڑھتا ہے تو اس کی نظر تبدیل ہو چکی ہوتی ہے۔ یعنی اس کی فکر اس آیت کے بارے میں کھل جاتی ہے، انسان جتنا زیادہ غور و خوض کرے گا اتنا ہی زیادہ ان مفاہیم کو سمجھے گا، اور ہمیں اسی چیز کی ضرورت ہے۔

حکومتی اراکین سے ملاقات میں رہبر معظم حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای کا خطاب

Read 1566 times

Add comment


Security code
Refresh