امریکی ایوان نمائندگان نے ٹرمپ کے اختیار کو محدود کرنے کی قرارداد منظور کرلی

Rate this item
(0 votes)
امریکی ایوان نمائندگان نے ٹرمپ کے اختیار کو محدود کرنے کی قرارداد منظور کرلی

امریکی ایوان نمائندگان نے صدرڈونلڈ ٹرمپ کے جنگ کے اختیار کو محدود کرنے کی قرارداد منظور کرلی۔ اطلاعات کے مطابق ایوان نمائندگان نے جنگ کے امکانات کو کم کرنے کےلیے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے جنگ  سے متعلق اختیار کو محدود کرنے کی قرارداد کو منظور کرلیا ہے۔

 قرارداد کے حق میں 224 جب کہ مخالفت میں 194 ووٹ پڑے۔ ری پبلکن پارٹی کے 3 ارکان نے بھی قرارداد کے حق میں ووٹ دیا جب کہ ڈیموکریٹس کے 8 ارکان نے پارٹی کے برعکس قرارداد کی مخالفت کی۔ امریکی نمائندگان کی قرا داد اب سینیٹ میں پیش کی جائے گی۔

 قرارداد میں 1973 کے جنگی اختیارات کے قانون کا حوالہ دیا گیا ہے، جس میں کانگریس کو امریکی صدر کی جنگ کے اختیارات کے استعمال کے متعلق جانچ کرنے کا اختیار دیا گیا ہے۔

 ذرائع کے مطابق اگرایوان کی جانب سے پیش کردہ یہ قرارداد کانگریس سے منظورہوجاتی ہے تواسے ٹرمپ کے ممکنہ ویٹو کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا۔  اس قرارداد کو یک وقتی قرار داد کے طورپرپیش کیا گیا ہے جس کی منظوری کے لیے صدارتی دستخط کی ضرورت نہیں ہوتی ہے۔

 اس متعلق اسپیکرایوان نمائندگان نینسی پلوسی نے کہا کہ امریکی حکومت کومزید تشدد روکنا چاہیے جب کہ ٹرمپ کے فوجی اقدامات محدود کرنے سے امریکی جانوں اوراقدارکا تحفظ ہوگا۔

واضح رہے کہ بغداد ايئر پورٹ کے قریب  امریکہ کے بزدلانہ حملے میں  سپاہ اسلام کے عظیم جنرل قاسم سلیمانی کی شہادت کے بعد ایران کی جانب سے  عراق میں امریکی فوجی اڈوں پرحملوں میں 80 امریکی فوجی ہلاک اور 230 زخمی ہوگئے ہلاک اور زخمی ہونے والے امریکی فوجویں کو اسرائیل اور اردن منتقل کردیا گیا ہے۔ امریکہ اپنے فوجیوں کی ہلاکت کو چھپانے کی کوشش کررہا ہے لیکن زمینی حقائق سے پتہ چلتا ہے کہ امریکہ کا بھاری نقصان ہوا ہے۔

Read 135 times

Add comment


Security code
Refresh