قابض آباد کاروں کا ایک بار پھر مسجد اقصیٰ پر حملہ

Rate this item
(0 votes)
قابض آباد کاروں کا ایک بار پھر مسجد اقصیٰ پر حملہ
مقبوضہ علاقوں کے درجنوں آباد کاروں نے اس بار "عید فصح" کے بہانے اور صیہونی حکومت کی سیکورٹی فورسز کی مکمل حمایت کے ساتھ مسجد الاقصی پر دھاوا بول دیا۔

 فلسطینی علاقوں میں درجنوں آباد کار اسرائیلی سیکورٹی فورسز کی حفاظتی چھتری تلے آج مسجد الاقصی کے مختلف حصوں میں داخل ہوئے۔

یہ حملہ یہودیوں کے تہوار کے پہلے دن کیا جاتا ہے جسے "عید فصح" کہا جاتا ہے، جس میں آباد کار، قابض حکومت کی سیکورٹی فورسز کی بھاری حفاظت میں، اشتعال انگیز پروگرام اور رسومات اور تلمودی عبادت مسجد اقصیٰ کے اندر انجام دیتے ہیں۔ .

یہودی انتہا پسندوں کے مسجد اقصیٰ میں داخل ہونے سے قبل قابض حکومت کی سیکیورٹی فورسز نے اس پر حملہ کیا اور آباد کاروں کی آمد کے لیے جگہ تیار کرنے کے لیے اس مسجد کے مختلف حصوں سے تمام مسلمان نمازیوں کو باہر نکال دیا اور نمازیوں کو اندر جانے سے روک دیا۔ صبح کی نماز ادا کرنے کے لیے مسجد، جس کی وجہ سے مسجد کے باہر اور اردگرد کی گلیوں میں نمازیں قائم ہوئیں۔

گذشتہ رات مسجد الاقصی پر صہیونیوں کے حملے اور اس مسجد کے صحنوں کو مسلمان نمازیوں سے خالی کرنے اور رمضان کے زائرین پر وحشیانہ حملے اور انہیں مسجد سے بے دخل کرنے کا واقعہ دیکھا گیا۔

فلسطینی مزاحمتی قوتوں نے آج صبح اور گزشتہ شب حالیہ دنوں میں صیہونی حکومت کے جارحانہ حملوں اور مسجد الاقصی پر حملے کے جواب میں منگل کی رات اور بدھ کی صبح صیہونی بستیوں کو نشانہ بنایا۔

فلسطین کی اسلامی مزاحمتی تحریک (حماس) نے گزشتہ روز ایک بیان میں یہودیوں کی پاسبانی کے بہانے مسجد الاقصی کے اندر مظلوم کو ذبح کرنے کے آباد کاروں کے منصوبے اور الاقصیٰ پر صیہونیوں کی طرف سے کسی بھی حماقت اور حملے کے خلاف سخت خبردار کیا ہے۔

اس سے قبل مغربی کنارے کے ایرن الاسود مزاحمتی گروپ نے بھی ایک بیان میں صیہونی حکومت کو دھمکی دی تھی اور غاصبوں سے کہا تھا: ’’یہ (صہیونی آباد کار) مسجد اقصیٰ میں جو بھی حماقت کریں گے، اس کی تمہیں بھاری قیمت چکانی پڑے گی۔ جس کے بارے میں آپ سوچتے بھی نہیں ہیں۔
https://taghribnews.com/vdcdnn0kfyt0jx6.432y.html
Read 169 times